سندھ میں 50 فیصد کیسز کے نمونے کورونا وائرس کی نئی قسم اومیکرون سے متاثر دریافت ہوئے ہیں۔سندھ حکومت کی جانب سے صوبے میں اومیکرون قسم کی شرح جاننے کے لیے 351 کووڈ 19 ٹیسٹ کیے گئے تو 175 نمونوں لگ بھگ 50 فیصد وائرس کی نئی قسم سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوئی۔وزیراعلیٰ آفس سے جاری بیان کے مطابق یہ تفصیلات وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیرصدارت اجلاس کے دوران بتائی گئیں۔

اس اجلاس میں بتایا گیا کہ اومیکرون سے متاثر کیسز میں بہت کم افراد کی سفری تاریخ تھی اور ان میں بھی اکثریت برطانیہ، امریکا، دبئی، جرمنی، سعودی عرب، نیروبی اور انگولا کا سفر کرنے والوں کی تھی۔

صوبے میں حالیہ دنوں میں کووڈ 19 کیسز کی تعداد میں روزانہ کی بنیاد میں اضافے پر بھی اجلاس میں بات کی گئی۔

بیان میں بتایا گیا کہ گزشتہ 30 دنوں یعنی 3 دسمبر 2021 سے 2 جنوری 2022 کے دوران کووڈ 19 کیسز کی تعداد میں اضافہ ہونا شروع ہوا۔

3 دسمبر کو 261 نئے کیسز کی تصدیق ہوئی تھی اور اس کے بعد سے روزانہ کیسز کی تعداد اوپر کی جانب گئے اور 2 جنوری کو 403 تک پہنچ گئے۔

اجلاس میں یہ بھی بتایا گیا کہ 4 دسمبر 2021 سے یکم جنوری 2022 کے دوران صوبے میں 51 افراد کا انتقال کووڈ 19 کے باعث ہوا۔

صوبے میں کیسز کی مجموعی تعداد 4 لاکھ 81 ہزار 949 جبکہ اموات 7 ہزار 673 تک پہنچ چکی ہے۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ آفس کی جانب سے روزانہ کی صورتحال کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران صوبے بھر میں 339 نئے کووڈ کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ کوئی ہلاکت نہیں ہوئی۔

وزیراعلیٰ نے صوبے کے عوام کو احتیاطی تدابیر اختیار کرنے پر بھی زور دیا اور خبردار کیا کہ دوسری صورت مں حکومت کو سخت اقدامات کرنا ہوں گے۔

انہوں نے محکمہ صحت کو یہ بھی ہدایت کی کہ سندھ بھر میں ٹیسٹوں کی تعداد میں بھی اضافہ کیا جائے۔

انہوں نے وبا کی صورتحال کو پریشان کن قرار دیتے ہوئے محکمہ صحت پر زور دیا کہ کووڈ 19 ویکسینیشن کی مہم کا آغاز کیا جائے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے اجلاس میں بتایا کہ اب تک سندھ میں 2 کروڑ 95 لاکھ 79 ہزار 471 ویکسین خوراکیں استعمال کی جاچکی ہیں۔

Leave a Reply